چین اور بھارت کے درمیان سرحدی کشیدگی مزید بڑھ گئی

78

بھارتی فوج کے سربراہ جنرل منوج پانڈے نے جمعرات کے روز بتایا کہ ریاست اروناچل پردیش کے قریب سرحد پر چینی فوج کی تعداد میں اضافہ ہوگیا ہے جس پر ہم گہرے نظر رکھے ہوئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ سرحد پر کشیدگی ہے اور غیرمتوقع صورت حال ہے مگر ہم شمالی سرحدوں پر صورت حال کو مستحکم رکھن کی کوشش کررہے ہیں۔ شمالی سرحد پر چین کی جانب سے اہلکاروں کی تعیناتی اسی طریقے سے جاری ہے۔ ہمارے پاس اتنی ہی تعداد میں فوجی موجود ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ لائن آف ایکچوئل کنٹرول (ایل اے سی) کے ساتھ تعینات فوجی چوکس ہیں جو کسی بھی جارحیت کا جواب دینے کے لیے ہمہ وقت تیار ہیں۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ ہندوستانی فوج چین کے ساتھ میز پر موجود سات مسائل میں سے پانچ کو حل کرنے میں کامیاب رہی ہے اور ہم فوجی اور سفارتی دونوں سطحوں پر بات کرتے رہتے ہیں۔ کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لیے ہمارے پاس کافی ذخائر ہیں۔

مزید پڑھیں:  یوکرین ریکوری کانفرنس، ساڑھے 700 بلین ڈالر کا قومی بحالی پروگرام پیش کر دیا گیا
جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.