چلاس میں بس پر فائرنگ، بچوں اور شوہر کو بچانے والی خاتون علاج کیلئے کراچی منتقل

38

رواں ماہ دو تاریخ کو کراچی آتے وقت گلگت بلتستان کے علاقے چلاس میں دہشت گردوں نے مسافر بس کو فائرنگ کا نشانہ بنایا تھا، حملے کے وقت روشن بی بی اپنے ڈیڑھ سال کے بیٹے، چارسال کی بیٹی اور شوہر کے ساتھ بس میں موجود تھیں۔خاتون نے اپنے بچوں اور شوہر کو بس کے فرش پر لٹا دیا تھا اور خود ان کے اوپر لیٹ گئی تھیں جس کے نتیجے میں چھ گولیوں نے ان کے جسم کو چھلنی کردیا تھا۔

گلگت میں ابتدائی علاج کے دوران تین گولیاں نکال لی گئیں مگر باقی تین گولیاں نکالنے کی سہولت نہیں تھی جس کے سبب گزشتہ رات قومی ائیرلائن کی پرواز کے ذریعے انہیں کراچی منتقل کیا گیا جہاں وہ نجی اسپتال میں زیرعلاج ہیں۔

شوہر نے بتایا کہ روشن کے جسم میں تین گولیاں ابھی موجود ہیں، آپریشن کے لیے ضروری میڈیکل ٹیسٹ کیے جارہے ہیں، بچے حادثے کے سبب خوف میں مبتلا ہوچکے ہیں۔نجی اسپتال میں اگلے چوبیس گھنٹے کے دوران روشن بی بی کا آپریشن متوقع ہے، ڈاکٹروں کے مطابق گولی ریڑھ کی ہڈی کے قریب ہونے کی وجہ سے کچھ پیچدگیوں کا سامنا ہے۔

مزید پڑھیں:  چلڈرن ہسپتال میں آگ بھڑک اٹھی،ریسکیو ٹیمیں آگ بجھانے میں مصروف
جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.