بھارت میں گائے لیجانے کے شبے میں مسلمان نوجوان قتل

مقامی پولیس نے واقعے کو ٹریفک حادثہ قرار دے دیا

161

ریاست ہریانہ کے 22 سالہ وارث کو بہیمانہ تشدد کا نشانہ بھی بنایا گیا۔ والدین کا کہنا ہے کہ وارث کو بجرنگ دل کے کارکنوں نے قتل کیا۔
پولیس نے واقعے کو ٹریفک حادثہ قرار دے کراس کےدو ساتھیوں نفیس اور شوقین کو حراست میں لے لیا۔ واقعے کیخلاف مقدمہ بھی درج نہیں کیا گیا۔ مارپیٹ سے قبل بنائی گئی ویڈیو میں پولیس اہلکار کو بھی دیکھا جاسکتا ہے۔خیال رہے کہ بھارت میں اب تک اس قسم کے حملوں میں درجن بھر افراد ہلاک ہو چکے ہیں ان حملوں میں ایسا بھی ہوا کہ گائے کا دودھ ایک جگہ سے دوسری جگہ منتقل کرنے والے مسلمانوں کو بھی غلط اطلاعات پر حملوں کا نشانہ بنایا گیا۔

مزید پڑھیں:  پنجاب کے نگران وزیراعلیٰ کیلئے پی ٹی آئی کی مشاورت، نام سامنے آگئے
جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.