گوادر میں ایک ماہ کے لیے دفعہ 144 نافذ

ایک ماہ کے لیے پانچ یا پانچ سے زائد افراد کے اکٹھا ہونے پر پاپندی

21

ترجمان حکومت بلوچستان کے مطابق گوادر میں دیرپا امن کا قیام اور عوام کی جان مال کا تحفظ صوبائی حکومت کی اولین ترجیح ہے، ضلعی انتظامیہ اور پولیس کی جانب سے سیکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے ہیں،کاشتی چوک گوادر میں دھرنے میں شریک احتجاجی مظاہرین منشتر ہوگئے، میرین ڈرائیو پورٹ روڈ کو دوبارہ کھول دیا گیا جبکہ سید ظہور شاہ روڈ پر دھرنا ختم کردیا گیا ہے۔ترجمان کا مزید کہنا ہے کہ ایکسپریس وے سربندر کراس پر 5 سو اہلکار تعینات کئے گئے ہیں، پسنی میں احتجاجی دھرنے کے ختم ہونے پر معمولات زندگی بحال ہو گئی ہے۔دوسری طرف امن وامان کی صورتحال کے پیش نظر ضلع گوادر میں دفعہ 144 نافذ کردی گئی۔محکمہ داخلہ بلوچستان کے مطابق ایک ماہ تک گوادر میں ریلی ، دھرنا اور پانچ یا پانچ سے زائد افراد کے اکٹھا ہونے پر پاپندی عائد کردی گئی ہے ، اس کے علاوہ اسلحہ کی نمائش پر بھی پاپندی ہوگی ۔

مزید پڑھیں:  بلوچستان؛ پوست کی کاشت کے خلاف کارروائی، ملزمان کے حملے میں 6اہلکار زخمی
جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.