مودی میں بولی وُڈ ڈائریکٹر کی روح آگئی، ہدایتکاری کی ویڈیو وائرل

15

بھارتی وزیراعظم نریندرا مودی زبردستی توجہ حاصل کرنے کے لیے مشہور ہیں، اور انہیں تصاویر کھنچوانے کا کریز بھی ہے۔ لیکن لگتا ہے اس بار ان میں بولی وڈ ڈائریکٹر کی روح آگئی تھی۔

سوشل میڈیا صارفین نے اپنی والدہ سے ملنے کے لیے جانے پر بھارتی وزیراعظم نریندرا مودی کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔

مودی جب والدہ کی 100 ویں سالگرہ کے موقع پر ان کے گھر پہنچے تو سیدھا اندر جانےکے بجائے گاڑی میں رک کر کیمرہ مین کا انتظار کرنے لگے۔

واقعے کی ویڈیو وائرل ہوئی تو نیٹیزنز نے انہیں خوب آڑے ہاتھوں لیا۔

اسی دوران ان کی ایک اور ویڈیو وائرل ہوئی، جس میں انہیں ملنے آنے والے لوگوں کو فوٹو شوٹ کے لیے ہدایات دیتے دیکھا جاسکتا ہے۔

سینئر بھارتی صحافی اشوک سوائن نے ٹوئٹر پر ایک ویڈیو شیئر کی جس میں بھارتی وزیراعظم نریندر مودی ہیلی کاپٹر سے اترنے کے بعد اپنے استقبال کا فوٹو شوٹ کروانے میں مصروف ہیں اور استقبال کے لیے آنے والے افراد کو بتا رہے ہیں کہ انہیں کتنے فاصلے پر کھڑا ہونا ہے او رکیسے پرنام کرنا ہے۔

بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کی والدہ ہیرا بائی مودی گجرات کے شہر گاندھی نگر میں رہتی ہیں۔

مزید پڑھیں:  سعودی عرب کا بغیرپرمٹ حج کرنے والوں پر2ہزار ڈالرسے زائد جرمانہ عائد کرنے کا اعلان

وزیر اعظم کے طور پر اپنے آٹھ سالوں کے دوران، مودی اکثر اپنی ماں سے ملنے گجرات جاتے ہیں۔

وزیر اعظم نریندر مودی انتخابات کے دوران اور الیکشن جیتنے کے بعد، اپنی اور اپنی ماں کی سالگرہ پر باقاعدگی سے ہیرا بائی سے ملنے جاتے ہیں اور آشیرواد حاصل کرتے ہیں۔

نریندرا مودی کی اپنی ماں سے آشیرواد لینے اور ان سے بات کرنے کی تصاویر اور ویڈیوز سوشل میڈیا پر وائرل ہیں۔

مودی اپنی والدہ ہیرا بائی کی 100ویں سالگرہ منانے کے لیے گجرات کے گاندھی نگر میں والدہ کے گھر گئے۔ مودی نے وہاں اپنی والدہ کی عیادت کی اور ان کی خیریت دریافت کی اور انہیں مٹھائی کھلائی۔

انہوں نے اپنی ماں کے ساتھ خصوصی پوجا کی، اپنی ماں کے پاؤں دھوئے، ان کی آنکھوں میں پانی ڈالا اور پیروں کی پوجا کی۔

مودی کی والدہ کی لمبی زندگی اور اچھی صحت کی خواہش کے لیے کئی مندروں میں خصوصی پوجا کی گئی۔ وڈ نگر کے مشہور ہٹکیشور مندر میں بھی خصوصی پوجا کا اہتمام کیا گیا۔

کچھ دیر بعد کیمرہ مین جیسے ہی وہاں پہنچا، مودی گاڑی سے باہر نکلے۔ ویڈیو منظرِ عام پر آنے کے بعد بہت سے لوگوں کی طرف سے تنقید کی گئی۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.