جرمنی، توانائی ضروریات پورا کرنے کے لیے حکومت کا ہنگامی اقدامات کا اعلان

27

جرمن حکومت نے توانائی کی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے ہنگامی اقدامات کا اعلان کیا ہے جس میں کوئلے کے استعمال میں اضافہ بھی شامل ہے۔

جرمنی کے وزیر اقتصادیات کا کہنا ہے کہ روس کی جانب سے گیس کی سپلائی میں کمی کی وجہ سے ممکنہ قلت کے خدشات پیدا ہو رہے ہیں۔ اس صورتحال کے پیشِ نظر ملک میں بجلی کی پیداوار کے لیے گیس کے استعمال کو محدود کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

جرمن وزیر اقتصادیات رابرٹ ہیبیک نے کہا کہ جرمن حکومت کی کوشش ہے کہ  گیس کی اس کمی کو پورا کرنے کے لیے کوئلے کے ایندھن کے طور پر استعمال میں اضافہ کرے۔

ان کا کہنا تھا کہ کوئلہ آلودگی پھیلانے والا ایندھن ہے لیکن اس صورت حال میں گیس کا استعمال کم کرنا ضروری ہے۔

دوسری جانب گیس مارکیٹوں میں صورتحال مزید سنگین ہو رہی ہے۔ حالیہ دنوں میں، گیس کو ذخیرہ کرنے کی سہولیات روس سے گیس کی سپلائی منقطع ہونے کی بعد ہونے والی کمی کو دوسری جگہوں سے خریداری کے باوجود پورا کرنے میں ناکام رہی ہیں۔

واضح رہے، روسی گیس کمپنی گیس پروم نے گزشتہ ہفتے اعلان کیا تھا کہ وہ تکنیکی وجوہات کی بنا پر نارڈ اسٹریم پائپ لائن ون کے ذریعے گیس کی ترسیل میں کمی کر رہی ہے۔

جرمن وزیر اقتصادیات نے کہا کہ ملک میں ذخائر فی الحال 56 فیصد ہیں، جو کہ حالیہ برسوں کی اوسط سے زیادہ ہیں۔  لیکن ساتھ ہی انہوں نے اس بات سے بھی خبردار کیا ہے کہ ان کی مکمل توجہ اس بات کو یقینی بنانے پر مرکوز ہے کہ موسم سرما کے لیے گیس کے ذخائر بھرے ہوں۔  یوکرین پر روس کے حملے کے بعد سے یورپی یونین کے ممالک نے خود کو روسی توانائی سے چھٹکارا دلانے کی کوشش کی ہے لیکن یہ ماسکو کی سپلائی پر متعدد رکن ممالک کے بہت زیادہ انحصار کی وجہ سے قدرتی گیس پر پابندی عائد کرنے کے بارے میں منقسم ہیں۔

مزید پڑھیں:  شدید گرمی کے باعث بے نظیر انکم سپورٹ کی رقم کا اجرا 26 جون تک روکنے کا فیصلہ

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.