15 ہزار روسی کروڑ پتی ملک چھوڑنے کے خواہشمند ہیں، برطانوی حکومت کا دعویٰ

18

برطانوی حکومت نے دعویٰ کیا ہے کہ ہزاروں روسی کروڑ پتی افراد اپنا ملک چھوڑنے کے خواہش مند ہیں۔ برطانوی حکومت کے مطابق 15 ہزار کروڑ پتی روسی شہری یوکرین کے خلاف جنگ کے اقتصادی اثرات کے باعث روس چھوڑنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

دارالحکومت لندن میں برطانوی وزارت دفاع نے گزشتہ روز بتایا کہ روس کے ہمسایہ ملک یوکرین پر فوجی حملے کے بعد روسی امراء کی بیرون ملک منتقلی کا رجحان بھی اب تک جاری ہے۔ ان امراء میں بہت بڑی بڑی کاروباری شخصیات بھی شامل ہیں اور روسی اشرافیہ کا وہ بہت بااثر سماجی طبقہ بھی جو گزشتہ برسوں میں انتہائی امیر ہو چکا ہے۔

برطانوی وزارت دفاع کے مطابق روسی کروڑ پتی شہریوں کی بیرون ملک روانگی روس یوکرین جنگ کا وہ بالواسطہ نتیجہ ہے جو طویل مدتی بنیادوں پر ملکی معیشت کو مزید نقصان پہنچائے گا۔ برطانیہ کی وزارت دفاع کے مطابق ترک وطن کی درخواستوں سے متعلق تازہ ترین ڈیٹا ظاہر کرتا ہے کہ تقریباً 15 ہزار روسی کروڑ پتی شہری ملک سے جانے کی کوششیں کر رہے ہیں۔

روس سے جو ہزارہا امراء بیرون ملک منتقلی کی کوشش کر رہے ہیں انہیں اس فیصلے پر صرف موجودہ روس یوکرین جنگ نے ہی مجبور نہیں کیا بلکہ اس میں مغربی ممالک کی طرف سے روس کے خلاف عائد کردہ ان تجارتی پابندیوں کا بھی بڑا عمل دخل ہے جو مستقبل میں جنگ کے اقتصادی اثرات کے ساتھ مل کر روسی معیشت کے لیے مزید مشکلات پیدا کر دیں گی۔

یہی وجہ ہے کہ روس کو ایک طرف اگر یوکرین کے خلاف جنگ کے شدید اثرات کا ابھی سے سامنا کرنا پڑ رہا ہے تو دوسری طرف مستقبل میں روسی معیشت کے لیے اسی جنگ اور مغربی پابندیوں کے طویل مدتی اثرات سے بچنا بھی ممکن نہیں رہے گا۔

مزید پڑھیں:  پاکستان کرکٹ ٹیم کے اعزاز میں عشائیہ، صدر مملکت اور آرمی چیف کی شرکت

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.