سپریم کورٹ بار کے سابق صدر لطیف آفریدی پشاور ہائی کورٹ کے اندر قتل

پولیس کا حملہ آور کو گرفتار کرنے کا دعویٰ

103

سابق صدر سپریم کورٹ بارعبدالطیف آفریدی پر نامعلوم افراد نے فائرنگ کردی، جس کے نتیجے میں وہ جاں بحق ہوگئے۔
پولیس حکام کے مطابق فائرنگ کی اطلاع ملتے ہی پولیس کی بھاری نفری نے ہائیکورٹ کو گھیرے میں لے لیا، جب کہ ریسکیو ٹیم نے عبدالطیف آفریدی کو لیڈی ریڈنگ اسپتال منتقل کردیا۔حکام کا کہنا ہے کہ فائرنگ کا واقعہ پشاور ہائی کورٹ کے بار روم میں پیش آیا، جہاں عبدالطیف آفریدی بیٹھے تھے، کہ نامعلوم افراد نے اندر گھس کر فائرنگ کردی جس میں وہ زخمی ہوگئے۔ترجمان لیڈی ریڈنگ اسپتال نے بتایا کہ لطیف آفریدی کو مردہ حالت میں ایل آر ایچ لایا گیا، انہیں متعدد گولیاں لگیں۔ عبدالطیف آفریدی کے جسد خاکی کو ایمبولینس کے ذریعے آبائی گاؤں روانہ کردیا گیا ہے۔پولیس حکام نے دعوی کیا ہے کہ پشاور ہائیکورٹ بار روم میں لطیف آفریدی پر فائرنگ کرنے والے حملہ آور کو گرفتار کرلیا گیا ہے، اور اس کی شناخت عدنان آفریدی کے نام سے ہوئی ہے۔

مزید پڑھیں:  بھارت ، یاتریوں کی بس کھائی میں جاگری،7 افراد ہلاک
جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.