ڈی ایچ اے کوئٹہ میں تعینات لیفٹیننٹ کرنل لئیق مرزا کی دہشتگردوں کے ہاتھوں شہادت

15

آئی ایس پی آر کے مطابق بارہ اور تیرہ جولائی کی شب دہشت گرد گروپ کے10 سے 12 افراد نے لیفٹیننٹ کرنل لئیق مرزا بیگ اور اُن کے عزیز عمر جاوید کو زیارت کے علاقے ورچوم سے اُس وقت اغوا کیا جب وہ قائد اعظم ریزیڈنسی سے واپس کوئٹہ آرہے تھے۔ سیکیورٹی فورسز نے علاقے میں آپریشن شروع کیا، جس میں ایس ایس جی کمانڈوز اور آرمی ہیلی کاپٹرز نے حصہ لیا، جس کے نتیجے میں 6 سے 8 دہشت گردوں نے پہاڑی راستے کے ذریعے نلہ کی طرف پیش قدمی کی تو اہلکاروں نے انہیں دیکھا اور ایکشن لیا، جس پر دہشت گردوں نے لیفٹیننٹ کرنل لئیق بیگ مرزا کو قتل کیا اور وہاں سے فرار ہونے کی کوشش کی تو اُن کی پیش قدمی کو روکا گیا۔ اس دوران سیکیورٹی فورسز اور دہشت گردوں کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ ہوا، جس میں دو دہشت گرد ہلاک ہوئے اور اُن کے قبضے سے بھاری مقدار میں اسلحہ، ایمونیشن، گولہ بارود برآمد ہوا۔ترجمان پاک فوج نے بتایا کہ فائرنگ کے تبادلے کے دوران باقی دہشت گرد عمر جاوید کو اپنے ہمراہ لے کر وقتی طور پر وہاں سے فرار ہوگئے، جن کی تلاش کے لیے آپریشن جاری ہے۔موسم خراب ہونے کے باوجود بھی سیکیورٹی فورسز نے پہاڑی علاقے میں آپریشن جاری رکھا ہوا ہے تاکہ ایک عام شہری عمر جاوید کو باحفاظت بازیاب کرایا جا سکے۔

مزید پڑھیں:  پنجاب اورخیبرپختونخواکےمختلف شہروں میں زلزلہ
جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.