بجٹ 23-2022؛ وفاقی ملازمین کی تنخواہوں میں 10 سے 15 فیصد اضافہ متوقع

12

بجٹ 23-2022؛ وفاقی ملازمین کی تنخواہوں میں 10 سے 15 فیصد اضافہ متوقع

بجٹ 23-2022؛ وفاقی ملازمین کی تنخواہوں میں 10 سے 15 فیصد اضافہ متوقع

اسلام آباد: حکومت نے بجٹ 23-2022 میں تنخواہوں اور پینشن میں اضافے کے لیے آئی ایف کو رضامند کرلیا ہے۔

نجی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق وفاقی حکومت نے بجٹ 23-2022 میں تنخواہوں اور پینشن میں اضافے کے لیے آئی ایف کو رضامند کرلیا ہے جس کے بعد ان کی تنخواہوں اور پینشن میں 10 سے 15 فیصد اضافہ متوقع ہے۔

رپورٹ کے مطابق وفاقی ملازمین کی تنخواہوں اور پینشن میں اضافے کی تجاویز کی حتمی منظوری وفاقی کابینہ دے گی جبکہ آئندہ بجٹ میں 550 ارب روپے پینشن کے لیے رکھنے کی تجویز ہے۔

واضح رہے کہ مالی سال 23-2022 کا بجٹ آج قومی اسمبلی میں پیش کیا جائے گا جس کے حوالے سے حکمت عملی طے کرلی گئی ہے۔

 آج قومی اسمبلی کا اجلاس اسپیکر کی زیر صدارت شام 4 بجے منعقد ہوگا جبکہ اجلاس کے دوران وفاقی وزیر مفتاح اسماعیل آئندہ مالی سال 23-2022 کا بجٹ پیش کریں گے۔

ملکی اور بین الاقوامی محاذوں پر معیشت کو درپیش موجودہ چیلنجز کو مدنظر رکھتے ہوئے بجٹ تشکیل دیا گیا ہے، بجٹ اجلاس کے دوران پارلیمنٹ ہاؤس کے اندر اور باہر سیکیورٹی کے سخت انتظامات ہوں گے۔

بجٹ میں 4400 ارب روپے کی سب سے زیادہ رقم قرضوں اور سود کی واپسی کے لیے مختص کی گئی ہے جبکہ صوبوں کو 4200 ارب روپے منتقل کرنے کا تخمینہ ہے۔

بجٹ میں دفاع کے لیے 1523 ارب مختص کیے گئے ہیں جبکہ گرانٹس کے لیے 580 ارب، ترقیاتی بجٹ کے لیے 800 ارب اور سبسڈیز کی مد میں 580 ارب رکھنے کی تجویز ہے۔

مزید پڑھیں:  ملک میں پانی کے بحران نے 22 سالہ ریکارڈ توڑ دیا

علاوہ ازیں بجٹ خسارے کا تخمینہ 4800 ارب روپے مقرر کرنے کی سفارش کی گئی ہے جبکہ حکومتی امور کو چلانے کے لیے 527 ارب روپے رکھنے کی تجویز ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.