سی ٹی ڈی نے مبینہ طور پر رشوت لے کر 5 رکنی ڈکیت کے قاتل سرغنہ کو چھوڑ دیا

18

اسٹریٹ کرمنل صمد موچکو تھانے میں ایک شہری کی ہلاکت میں ملوث بتایا گیا ہے۔ سی ٹی ڈی ذرائع کے مطابق کاؤنٹر ٹیررزم ڈیپارٹمنٹ نے گزشتہ ہفتے ایک چھاپے میں موچکو کے علاقے میں اسٹریٹ کرائم کی واردات کے دوران سبحان نامی شہری کو ہلاک کرنے والے ڈکیت صمد کو گرفتار کیا جس کی نشاندہی پر اس گروپ کے ایک اور ملزم الطاف کو بھی گرفتار کیا۔سی ٹی ڈی ذرائع کے مطابق سول لائن میں تعینات سی ٹی ڈی کے افسران نے مبینہ ملی بھگت سے ایک ملزم کو رہا کردیا جبکہ الطاف نامی ملزم کی گرفتاری ظاہر کردی اور اب اس ملزم کو سی آئی اے کراچی کے حوالے کردیا گیا ہے جبکہ اسٹریٹ کرائم کی واردات کا مقدمہ 291/23موچکو تھانے میں درج کیا گیا ہے۔
ایف آئی آر کے مطابق مقتول سبحان اوچ پلانٹ گیس پرائیویٹ لمیٹڈ نزد نبی داد گوٹھ سے سلنڈر لوڈ کرکے واپس سلطان آباد جارہا تھا کہ اس دوران دو موٹر سائیکلوں پر سوار 4 مسلح ملزمان نے سبحان کو لوٹنے کی کوشش کی تو سبحان نے ڈاکوؤں سے مزاحمت کی اور مسلح ملزمان نے فائرنگ کرکے سبحان کو شدید زخمی کردیا۔مقدمے کی تفصیلات کے مطابق سبحان نجی ہسپتال میں زیر علاج رہا اور دم توڑ گیا۔ ادھر سی ٹی ڈی ذرائع نے بتایا کہ صمد نامی اسٹریٹ کرمنل 5 رکنی گروپ کا سرغنہ ہے جس میں زیر حراست الطاف، عابد علی، راشد علی، گل شیر اور منور شامل ہیں۔ذرائع کے مطابق گل شیر نامی اسٹریٹ کرمنل گروپ کو مخبری کرتا ہے اور اس کے بعد یہ لڑکے دو موٹر سائیکلوں پر اسٹریٹ کرائم کی واردات سرانجام دیتے ہیں

مزید پڑھیں:  صدر عارف علوی فلسطینی سفارتخانے پہنچ گئے، غزہ پر اسرائیلی جارحیت کی مذمت
جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.