کراچی؛ انٹر سال اول کے متنازع نتائج، بورڈ کا امتحانی ریکارڈ سیل

26

فیکٹ فائنڈنگ کمیٹی نے بورڈ کے سیکریٹری سے امتحانی قوانین سمیت دیگر متعلقہ ریکارڈ طلب کرلیا ہے، ادھر بورڈ نے اپنے ملازمین کی پیر 5 فروری کی تعطیل منسوخ کرتے ہوئے انھیں ریکارڈ کی دستیابی کے لیے طلب کرلیا ہے۔یاد رہے کہ نگراں وزیر اعلی سندھ جسٹس(ر) مقبول باقر نے انٹر سال اول کے متنازع نتائج جاری ہونے کے 25 ویں روز این ای ڈی یونیورسٹی کے وائس چانسلر سروش حشمت لودھی کی سربراہی میں ہفتہ 3 فروری کو ایک سہ رکنی فیکٹ فائنڈنگ کمیٹی قائم کی تھی، کمیٹی نے کام کا آغاز کردیا ہے اور انٹر بورڈ کراچی کے ذرائع کے مطابق کمیٹی کے کنوینر ڈاکٹر سروش لودھی نے اتوار کو کمیٹی کا پہلا اجلاس بورڈ میں منعقد کیا۔

اجلاس میں بورڈ کے متعلقہ افسران کو بھی بلایا گیا تھا، کمیٹی کے ایک رکن سیکریٹری سندھ ایچ ای سی اجلاس میں آن لائن شریک ہوئے جبکہ ایک تیسرے رکن آئی بی اے کے ایگزیکٹیو ڈائریکٹر ڈاکٹر اکبر زیدی پہلے اجلاس میں شریک نہیں تھے۔انٹر بورڈ کے ایک افسر نے ’’ ایکسپریس‘‘ کو بتایا کہ اجلاس کے دوران کمیٹی نے ہم سے امتحانی پرچوں کی ترتیب(پیپر سیٹر)، کاپیوں کی جانچ کے طریقہ کار ، بورڈ آف گورنرز کی تفصیلات اور چیئرمین ،سیکریٹری اور ناظم امتحانات کی ذمےداریوں کے حوالے سے قوانین کی دستاویزات مانگی ہیں لہذا اس سلسلے میں بورڈ کے تمام متعلقہ عملے و افسران کو پیر کے روز بلالیا گیا اور اس سلسلے میں ایک سرکلر بھی جاری کیا گیا ہے۔

مزید پڑھیں:  پنڈی میں کار درخت سے جا ٹکرائی، نئی دلہن جاں بحق، چار افراد شدید زخمی
جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.