بجلی کی فی یونٹ قیمت میں 7 روپے 91 پیسے کا بڑا اضافہ

598

بجلی کی فی یونٹ قیمت میں 7 روپے 91 پیسے کا بڑا اضافہ

 

نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا) نے بجلی کے بنیادی ٹیرف پر7 روپے 91 پیسے فی یونٹ اضافے کی منظوری دے دی۔  نیپرا نے اس منظوری کے بعد فیصلہ حکومت کو ارسال کردیا ہے جس کے بعد حکومت کی جانب سے قیمت بڑھانے کا نوٹی فکیشن جاری کردیا جائے گا۔

نیپرا کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق نیپرا کا تعین کردہ اوسط ٹیرف 16.91 روپے تھا جو بڑھا کر 24.82 روپے فی یونٹ تعین کیا گیا ہے۔ بجلی کا ٹیرف بڑھنےکی بنیادی وجہ روپے کی قدر میں کمی ہے، ٹیرف بڑھانے کی وجہ کپیسٹی لاگت اور عالمی مارکیٹ میں ایندھن کی قیمتوں میں اضافہ ہے ۔

اعلامیے کے مطابق توانائی کی خریداری کی قیمت 1152 ارب روپے متوقع ہے اور کپیسٹی لاگت بشمول این ٹی ڈی سی اور ایچ وی ڈی سی 1366 ارب روپے تخمینہ ہے ،  ڈسکوز کی کل ریونیو کا تخمینہ تقریبا 2805 ارب روپے متوقع ہے۔

نیپرا کی جانب سے کہا گیا کہ مالی سال 23-2022 کے لیے نیشنل اوسط ٹیرف 24.82 روپےفی یونٹ تعین کیا ہے۔

نیپرا کے مطابق میپکو، پیسکو، گیپکو، حیسکو، سیپکو، کیسکو اور ٹیسکو کو 5 سالہ مدت میں ڈسٹری بیوشن سسٹم میں انویسٹمنٹ پروگرام کے لیے تقریباً 406 ارب روپے کی سرمایہ کاری کی اجازت دی گئی ہے جب کہ ڈسکوز کے ریونیو کا تخمینہ تقریباً 2805 ارب روپے متوقع ہے، ڈسکوز کے ٹرانسمیشن اور ڈسٹری بیوشن لاسز 13.46 سےکم کرکے 11.70 فیصد کردیے ہیں۔

نیپرا کے مطابق تعین کیا گیا ٹیرف وفاقی حکومت کو نوٹی فکیشن کے لیے بھیج دیا گیا ہے۔  ٹیرف برھنے کی بنیادی وجہ روپے کی قدر میں کمی اور ایندھن میں اضافہ ہے۔

مزید پڑھیں:  وضاحت کی ضرورت نہیں، پرویزالہیٰ وزیراعلیٰ کے امیدوار ہیں، شجاعت حسین

واضح رہے کہ میپکو، پیسکو گیپکو، حیسکو، سیپکو، کیسکو اور ٹیسکو نے مالی سال 2020-21 سے لے کر 2024-25 تک کے ملٹی ائیرٹیرف کے لیے درخواستیں دی تھیں۔

 

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.