پشاور پولیس لائن دھماکے کا مقدمہ تھانہ سی ٹی ڈی میں درج

ایف آئی آر میں دہشت گردی اور قتل کی دفعات شامل کی گئی ہیں

101

پشاور کی پولیس لائن مسجد میں پیر کو نماز ظہر کے وقت ہونیوالے خودکش حملے میں پولیس افسران اور اہلکاروں سمیت 100 سے زائد افراد شہید اور 50 سے زائد زخمی ہوگئے تھے، واقعے میں مسجد کا ایک حصہ بھی منہدم ہوگیا تھا، واقعے کی ذمہ داری کالعدم ٹی ٹی پی خراسانی گروپ نے قبول کی تھی۔واقعے کے دو روز بعد پشاور دھماکے کا مقدمہ ایس ایچ او تھانہ شرقی کی مدعیت میں تھانہ سی ٹی ڈی میں درج کرلیا گیا، ایف آئی آر میں دہشت گردی اور قتل سمیت دیگر دفعات شامل کی گئی ہیں۔ایف آر میں مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ مسجد کی چھت منہدم ہونے کی وجہ کثیر تعداد میں پولیس افسران اور جوان شہید ہوئے، نامعلوم دہشت گردوں نے ملک و قوم کو نقصان پہنچانے کی کوشش کی۔

مزید پڑھیں:  اسلام آباد ائیرپورٹ پر برازیلین شہری گرفتار، ڈیڑھ کلو کوکین برآمد
جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.